رواں سال کی پہلی پھانسی دیدی گئی

راولپنڈی(ڈیلی خبر ) راولپنڈی کے اڈیالہ جیل میں دہرے قتل کے مجرم کو پھانسی دے دی گئی،یہ سال 2017 کی پہلی پھانسی ہے۔پولیس کے مطابق 2006 میں گلگت میں ہونے والے فرقہ وارانہ شدت کے دوران قتل کے الزام میں سزائے موت پانے والے شخص کو آج صبح اڈیالہ جیل میں پھانسی دی گئی۔سزائے موت پر عملدرآمد کے بعد لاش ورثا کے حوالے کردی گئی۔پھانسی سے قبل مجرم نوید حسین کی اس کے والد فدا علی، بھائیوں، کزن اور دیگر رشتہ داروں سے آخری ملاقات کرائی گئی۔پولیس نے 24جون 2006 کو نوید حسین کو قتل، فرقہ وارانہ شدت اور دہشت گردی کے الزامات میں گرفتار کیا تھا اوربعد ازاں انسداد دہشت گردی کی عدالت نے اسے سزائے موت سنائی تھی جبکہ مجرم پر مذکورہ واقعات کے علاوہ جون 2006 میں انسداد دہشت گردی عدالت کے جج جمشید جدون کے قتل میں بھی ملوث ہے۔2013 میں نوید حسین سکردو کی جیل سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا تھا تاہم بعد ازاں پولیس نے اسے دوبارہ گرفتار کرلیا تھا۔صدرِمملکت کی جانب سے رحم کی اپیل مسترد ہونے کے بعد عدالت نے 4 جنوری کو مجرم کے ڈیتھ وارنٹ جاری کیے تھے۔