حامد میر نے عرب شہزادوں کے پاکستان آنے اور تلور کے شکار کے پیچھے چھپی کہانی دبے لفظوں میں بیان کر دی ہے

اسلام آباد(ڈیلی خبر )سینئر صحافی حامد میر نے عرب شہزادوں کے پاکستان آنے اور تلور کے شکار کے پیچھے چھپی کہانی دبے لفظوں میں بیان کر دی ہے ۔تفصیلات کے مطابق حامد میرنے نجی ٹی وی 24نیوز کے پروگرام میں تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ جن مقاصد کیلئے یہاں پر آ کر شہزادے تلور کھاتے ہیں ان مقاصد کو پورا کرنے کیلئے کچھ اور کام بھی کرتے ہیں ،اسی لیے میں نے غیر ت اور عزت کی بات کی ہے ۔حامد میر کا کہناتھا کہ پاکستان میں خصوصی مہمانوں کے میزبان صرف ان کیلئے تلور کے شکار کا بندو بست نہیں کرتے بلکہ عزت اور غیرت کے شکار کا بھی بندو بست کرتے ہیں ۔واضح رہے کہ اس سے قبل ڈاکٹر عامر لیاقت نے بھی اس حقیقت سے پردہ اٹھایا تھا اور انہوں نے ذراصاف الفاظ میں ہی سب کچھ بیان کرتے ہوئے کہا تھا کہ تلور کا گوشت جنسی خواہشات کو بڑھانے کیلئے استعمال کیا جاتاہے اور جب عرب شیوخ پاکستان آتے ہیں تو ان کی بیگمات ساتھ نہیں ہوتیں لیکن ان کے خیموں سے چیخیں بلند ہوتی ہیں