پولیس انسپکٹر اور سپاہی

تم دوسال سے اس تھانے میں ہو لیکن آج تک تم نے ایک بھی مجرم پکڑ کر نہیں دکھایا تمھاری اس کارکردگی پر ہی تبادلہ کر سکتا ہوں لیکن ایسا کرنے سے پہلے میں تمھیں یہ آخری موقع دے رہا ہوں۔سرکاری باغ سے روزانہ آم چوری ہو رہے ہیں اگر تم نے تین دن کے اندر آم چوری کرنے والے کو نہ پکڑا تو میں سچ مچ تمھارا تبادلہ کردوں گا​
تبادلے کے خوف سے سپاہی نے رات کو پہرا دینا شروع کیا آخر کار دوسری رات کو اس نے ایک شخص کو باغ کے کونے میں دھر لیا جس کے پاس ایک بھرا اہوا تھیلا تھا سپاہی کے حکم پر اس آدمی نے تھیلا اْلٹ کر دکھا دیا تو اس میں کچھ زیورات اور روپے تھے یہ دیکھ کر سپاہی نے ہنس کر کہا:​
معاف کرنا بھائی مجھ سے غلطی ہو گئی اب تم اپنا یہ سامان اْٹھا کر جاؤ اور خدا کا شکر ادا کرو کہ تمھارے تھیلے سے آم برآمد نہیں ہوئے​