پانامہ کیس میں نوازشریف کو بچایا گیا تو فیصلہ قبول نہیں کریں گے: جمشید دستی

ملتان (نیوزڈیسک) پاکستان عوامی راج پارٹی کی مرکزی ایگزیکٹو کمیٹی کا اجلاس مقامی ہوٹل میں منعقد ہوا۔ جس کی صدارت چیئرمین و رکن قومی اسمبلی جمشید احمد دستی نے کی۔ اجلاس میں مرکزی سیکرٹری جنرل رانا محبوب اختر، مرکزی سیکرٹری اطلاعات رانا امجد علی امجد، چوہدری عامر کرامت، میاں عامر سلطان گوریا، صابر عطاء تھہیم، جعفر حسین بھٹہ، عبدالستار ترین سمیت ممبران کمیٹی وعہدیداران نے شرکت کی۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ منشور کا پہلا رف ڈرافٹ آئندہ اجلاس میں پیش کیا جائے گا۔ اجلاس میں بتایا گیا کہ 8 اپریل کو ملتان میں ہونیوالے جلسے کی اجازت کے لیے ہائیکورٹ ملتان بینچ میں رٹ دائر کر دی گئی ہے۔ اجلاس میں آئندہ الیکشن کے لیے الیکشن سیل قائم کرنے اور تنظیمی ڈھانچہ کو فعال بنانے کا بھی فیصلہ کیا گیا۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین جمشید احمد دستی نے کہا کہ دہشتگردی کی آڑ میں سیاسی سرگرمیوں کو بند کر دینا کوئی دانش مندی نہیں۔ پنجاب میں رینجرز کی تعیناتی کی حمایت کرتے ہیں۔ لیکن اس کی آڑ میں کسی انتقامی کارروائی کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ انہوں نے کہا کہ اگر عدلیہ نے پانامہ کیس میں نوازشریف اینڈ کمپنی کو بچا دیا تو یہ ملکی تاریخ کا تاریک دن ہوگا۔ان کاکہناتھا کہ عمران خان عدلیہ کافیصلہ قبول کریں یانہ کریں، لیکن پاکستان عوامی راج پارٹی اس فیصلے کو قبول نہیں کرے گی۔ چیئرمین نیب خود کرپٹ ہے اسے ہٹایا جائے اور اس کے خلاف تحقیقات کی جائیں۔