شریف فیملی کی جے آئی ٹی کے سامنے پیشی: ساری پلاننگ کر لی گئی ، تفصیلات لیک ہوگئیں

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پاناما کیس کے فیصلے کر بعد جے آئی ٹی کا قیام عمل میں لایا جائے گا لیکن نواز شریف اور انکے صاحبزادے اس تحقیقاتی ٹیم کے سامنے پیش نہیں ہونگے اور وہ کیا کرنے والے ہیں ڈاکٹر شاہد مسعود نے انکشاف کر دیا ہے۔تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل پر اپنے پروگرا م میں بات کرتے ہوئے ڈاکٹر شاہد مسعود کا کہنا تھا کہ اس تحقیقاتی ٹیم میں نیب موجود ہے، ایف آئی اے موجود ہے اور وزیر اعظم کا خاندان بھی موجود ہے، جسکو یہ پہلے ہی حدیبیہ پیپر ملز کیس میں کلین چٹ دے چکے ہیں، لیکن جے آئی ٹی میں سارے سوالات ایسے شامل کیے گئے ہیں جنکا تعلق میاں شریف مرحوم سے ہے تو کیا جے آئی ٹی تحقیقات کے لیے قبرستان جائے گی؟ انکا کہنا تھا کہ مجھے میرے ذرائع نے بتایا ہے کہ پانامہ کیس پر سپریم کورٹ نے جے آئی ٹی بنانے کا حکم دیا ہے، اس جے آئی ٹی کے سامنے وزیر اعظم نواز شریف اور ان کے صاحبزادے پیش ہوں گے ۔ لیکن نواز شریف نے جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہونے سے بچنے کے لیے آئند ہ60دنوں میں پانچ سے چھ غیر ملکی دورے رکھ لیے ہیں۔ جب جب انکو طلب کیا جائے گا وہ کسی غیر ملکی دورے پر ہونگے اور پیش نہیں ہوسکے گے۔