سب بڑی خبرآگئی ، عرب دنیا کے تمام تنازعات سے دور ایک اور عرب ملک بھی میدان میں کود پڑا، اتحادمیں شمولیت کا اعلان کردیا

مسقط(ڈیلی خبر) عرب دنیا کے تمام تنازعات سے عمان نے اپنے آپ کو علیحدہ رکھاتھا لیکن اب وہ بھی میدان میں کود پڑا ہے اور سعودی اتحاد میں شمولیت کا اعلان کردیا۔برطانوی خبررساں ادارے ’رائٹرز‘ کے مطابق عمان اب تک ایران کیخلاف عرب ریاستوں کے اقدامات سے تمام معاملات سے الگ رہا لیکن اب دہشتگردی کیخلاف سعودی اتحادمیں شمولیت اختیار کرلی ۔سعودی اور گلف ذرائع کے حوالے سے بتایاگیاکہ سعودی نائب ولی عہد اور وزیردفاع محمد بن سلمان کو لکھے گئے خط میں بتایاگیاکہ عمان کے ’سلطان‘نے 40ملکی اتحاد میں شمولیت کیلئے آمادگی کا اظہارکردیا۔یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ عرب ممالک کیساتھ عمان کے اختلافات کھل کر کبھی سامنے نہیں آئے لیکن عمان کے سلطان کا خیال ہے کہ ریاض اور تہران کے درمیان وسیع ترعلاقائی تصادم دونوں ممالک کی اپنی ہی سلامتی کیلئے خطرہ ہے اور نمٹنے کے خواہاں ہیں۔شاید اسی وجہ سے ماضی میں خطے کے لحاظ سے عمان نے ہمیشہ ہی ایسی پالیسی اپنائی جو دیگر گلف ممالک کی پالیسیوں سے مختلف تھی اور حالیہ فیصلے سے محسوس ہوتاہے کہ عمان نے خطے اور ایران وغیرہ سے متعلق اپنی پالیسی تبدیل کرلی ہے ، پہلے یہی خیال کیاجاتاتھاکہ عمان ایران سے زیادہ قریب اور سعودی عرب اور گلف ممالک کاروایتی حریف ہے ۔بتایاگیاہے کہ اس خط کے بعد اب توقع کی جارہی ہے کہ آنیوالے دنوں میں محمد بن سلمان مسقط جائیں گے جہاں شاہ سلمان کے دورے کیلئے معاملات کاجائزہ لیں گے ۔یادرہے کہ سعودی عرب نے دسمبر 2015ءمیں اتحادبنانے کا اعلان کیاتھا جس کی خطے میں داعش کیخلاف سرگرم امریکہ نے بھی خوش آئند قراردیاتھا، اس اتحاد کا واضح مقصد گوکہ ایران کا مقابلہ کرنا نہیں لیکن پھر بھی اتحاد میں ایران یا اس کی حامی حکومت عراق اتحادیوں میں شامل نہیں۔