فیس بک کے ذریعے لاہور کے نوجوان کو محبت کے جال میں پھنسا نے والی نائلہ کے سابقہ کرتوت سامنے آگئے ، آپ بھی پڑھیے

گوجرانوالہ ( مانیٹرنگ ڈیسک ) فیس بک پر محبت کا جھا نسہ دے کر آٹھ لاکھ روپے ہتھیانے کے بعد نوجوان کو قتل کر نیوالی لڑکی نائلہ بطور ٹریول ایجنٹ سمبڑیال میں کام کر تی تھی ۔تفصیلات کے مطابق مقتولہ کی والدہ شمیم بی بی کا کہنا ہے کہ تین ماہ قبل نائلہ کا فون آیا تھا جس میں نائلہ نے کہا تھا کہ اس نے اور شیرون نے شادی کر لی ہے اور وہ عنقریب بیرون ملک چلے جائیں گے جس کے بعد 26 جنوری کو آٹھ لاکھ روپے لے کر شیرون سمبڑیال چلا گیا اس نے کہا تھا کہ وہ بیرون ملک آسٹر یلیا جا رہا ہے ۔ اسکی ماں نے یہ بھی بتا یا کہ یکم فروری کو شیرون کا میسج آیا جس میں لکھا تھا کہ وہ بحری جہاز کے راستے ترکی جارہے ہیں ، جس کے بعد 5 فروری کو ایک اور میسج آیا کہ بحری جہاز کے ڈوبنے کی وجہ سے نائلہ اور شیرون کی موت ہوگئی ہے یہ بھی کہا گیا کہ نائلہ کا تعلق ایک کریمنل گھرانے سے ہے اور اسکا ایک بھائی بھی پولیس مقابلے میں مارا جا چکا ہے ۔ اس طرح شیرون سے پیسے ہتھیا نے کے لیے اسے پھنسا کر قتل کیا گیا ۔ واضح رہے کہ فیس بک پر دوستی کے بعد قتل ہو نے والا شیرون چار بہن بھائیوں میں سے سب سے چھوٹا تھا ۔ قتل ہونے والے شیرون کی عمر 21سال تھی اوروہ سندھ انسٹیٹیوٹ آف نرسنگ خیرپور میں فائنل ائیر کا طالب علم تھا ۔ اس کے علاوہ شیرون ڈینٹل ٹیکنیشن کا کورس بھی کررہا تھا ، وہ سب بہن بھائیوں کا بہت لاڈلا اور پیارا تھا ۔