وزیراعظم سے عالمی بینک کی سی ای او کی ملاقات،بھارت سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی کر رہاہے،نوازشریف،پاکستان سرمایہ کاری کیلئے درست جگہ ہے :کرسٹلینا جارجیو

اسلام آباد(ڈیلی خبر )وزیراعظم نوازشریف سے سربراہ عالمی بینک مس کرسٹلینا جارجیو نے ملاقات کی ہے جس دوران نوازشریف نے بھارت کی جانب سے سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی کا معاملہ بھی اٹھایا جبکہ مس کرسٹلینا کو ورلڈ بینک گروپ کی بطور سی ای او تقرری پر مبارک باد بھی پیش کی ۔ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نوازشریف کا کہناتھا کہبھارت کی مغربی دریاوں پرڈیم کی تعمیرسندھ طاس معاہدے کی کھلی خلاف ورزی ہے۔ ان کا کہناتھا کہ پاکستان ورلڈبینک کےساتھ شراکت داری کوقدرکی نگاہ سے دیکھتاہے،ورلڈ بینک نے1952 سے اب تک پاکستان میں 31 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کی،عالمی بینک نے سرمایہ کاری توانائی ، انفرااسٹرکچراور دیگر شعبوں میں کی۔نوازشریف کا کہناتھا کہ ڈیولپمنٹ پالیسی کریڈٹ کیلئے ورلڈبینک کی2.5 ارب ڈالرکی ادائیگی بھی قابل قدرہے۔ان کا کہناتھا کہ توانائی ضروریات پوری کرنے کیلئے ہائیڈل منصوبوں کوترجیح دے رہے ہیں،بھاشا ڈیم قومی اہمیت کا حامل منصوبہ ہے ، بھاشا ڈ یم سے پانی محفوظ کرنے اورسستی بجلی پیدا ہوگی،پاکستان مختلف شعبو ںمیں اصلاحات جاری رکھے گا ۔اس موقع پر عالمی بینک کی سی ای او نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ بہترصورتحال وزیراعظم کی لیڈرشپ اورذاتیکاوشوں کانتیجہ ہے، پاکستان سرمایہ کاری کیلئے درست جگہ ہے،پاکستان میں بہتری اور مثبت تبدیلیاں واضح طور پر نظر آرہی ہیں،پاکستان نے توانائی اور انفرا اسٹرکچر کے شعبے میں نمایاں کامیابیاں حاصل کیںہیں۔