پاکستان نے ہماری بیٹی کا مقدمہ انسانی بنیادوں پر حل کیا، پاکستانی وزرات داخلہ و خارجہ کے مشکور ہیں: سشما سوراج

ہلی(ڈیلی خبر) بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے کہا ہے کہ بھارتی شہری ڈاکٹر عظمیٰ کو انڈیا واپس بھیجنے میں پاکستانی وزارت خارجہ اور وزارت داخلہ نے انسانی بنیادوں پر ان کی بہت مدد کی، مقدمے کو غیر جانبدارانہ بنیادوں پر لڑاجبکہ پاکستان کی مدد کے بغیر ڈاکٹر عظمیٰ کی گھر واپسی شاید ممکن نہیں ہو پاتی۔پاکستانی شہری سے شادی کرنیوالی بھارتی لڑکی عظمیٰ نے واپسی پر بھارت میں قدم رکھتے ہی کیا کیا؟تصویر سامنے آگئیبھارتی شہری عظمیٰ کی نئی دہلی واپسی کے بعد بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج اور پاکستان میں انڈیا کے ڈپٹی ہائی کمشنر جے پی سنگھ کے ساتھ ایک پریس کانفرنس کی جس کے دوران سشما سوراج کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک کے درمیان موجودہ کشیدگی کے باوجود جس طرح پاکستانی وزارت خارجہ اور وزارت داخلہ نے ان کی مدد کی اس کے لیے بھی وہ شکر گزار ہیں۔’آج میں نے راحت کا سانس لیا ہے کہ میری بچی واپس لوٹ آئی ہے، اور وہ راحت آپ کو میرے چہرے پر بھی نظر آرہی ہوگی۔بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے ڈاکٹر عظمیٰ کے پاکستانی وکیل بیرسٹر شاہ نواز نون اور جسٹس کیانی کا بھی شکریہ ادا کیا۔ان کا کہنا تھا کہ بیرسٹر شاہنواز نون نے عظمیٰ کا کیس بالکل اپنی بیٹی کی طرح لڑا اور جسٹس کیانی نے کیس کا فیصلہ حقائق اور انسانیت کو مد نظر رکھتے ہوئے کیا جس کے لیے وہ ان کی شکرگزار ہیں۔سشما سوراج نے اسلام آباد میں انڈیا کے ڈپٹی ہائی کمشنر جے پی سنگھ کا بھی شکریہ ادا کیا۔