’امریکہ کی اس سازش کا ہم مل کر مقابلہ کریں گے‘ روس اور چین کے درمیان تاریخی معاہدہ ہوگیا، جان کر مغربی ممالک کے واقعی ہوش اُڑجائیںگے

بیجنگ (نیوز ڈیسک)دنیا پر تسلط کا خواب دیکھنے والا امریکہ اپنی متنازعہ میزائل دفاعی شیلڈ کا دائرہ بڑھاتے ہوئے بالآخر اسے چین کے ہمسایہ ملک جنوبی کوریا میں بھی لانے کا خواب دیکھ رہا تھا، لیکن عین اس موقع پر چین اور روس نے امریکی عزائم کے خلاف اتحاد کا اعلان کر کے اس کے ارادے خاک میں ملا دئیے ہیں۔ یاہو نیوز کی رپورٹ کے مطابق امریکہ نے موقف اختیار کررکھا تھا کہ ٹرمینل ہائی آلٹی ٹوڈ ایریا ڈیفنس (THAAD) سسٹم شمالی کوریا کی جانب سے لاحق خطرے کی وجہ سے جنوبی کوریا میں نصب کرنا ضروری ہے، لیکن چین اور روس نے اس موقف کو سختی سے رد کردیا ہے۔ دونوں ممالک نے امریکہ پر واضح کردیا ہے کہ اس پیشرفت کی اجازت نہیں دی جائے گی اور چین و روس کی سکیورٹی کو لاحق کسی بھی خطرے کے ساتھ سختی سے نمٹا جائے گا۔امریکی میزائل دفاعی شیلڈ سسٹم کے بارے میں دعویٰ کیا جاتا ہے کہ یہ مختصر، وسطی اور لانگ رینج کسی بھی قسم کے میزائلوں کو راستے میں ہی تباہ کرسکتا ہے۔ اگرچہ امریکہ شمالی کوریا کے خطرے کو بہانہ بنا کر یہ نظام جنوبی کوریا میں نصب کرنے کی تیاریاں کررہا ہے لیکن چین کا کہنا ہے کہ اس کا مقصد چینی دفاعی مراکز اور میزائل لانچنگ سسٹمز پر نظر رکھنا ہے۔ روس نے بھی امریکہ کے اس قدم کو خطے کی سلامتی کے لئے خطرہ قرار دیا ہے۔ دونوں ممالک نے ناصرف امریکہ کو اس کام سے باز رہنے کو کہا ہے بلکہ جنوبی کوریا پر بھی واضح کردیا ہے کہ اسے اچھی طرح سوچ لینا چاہیے کہ امریکی حمایت کا نتیجہ کیا ہو سکتا ہے۔