فلسطینی 2بچیوں کو علیحدہ کرنے کیلئے شاہ سلمان کی ہدایت،علاج و سفری اخراجات سعودی فرماں روا اٹھائیں گے

ریاض(ڈیلی خبر )سعودی فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے غزہ شہر سے تعلق رکھنے والی 2 جڑی ہوئی فلسطینی بچیوں حنین غانم اور فرح غانم کے علاج اور ان کو علیحدہ کرنے کے آپریشن کے لیے مطلوب اقدامات کی ہدایت کردی ہے۔سعودی میڈیا رپورٹس کے مطابق اردن میں سعودی عرب کے سفارت خانے نے فلسطین میں یونیسف تنظیم اور شاہ سلمان امدادی مرکز کے علاوہ اردن کی وزارت داخلہ و خارجہکے ساتھ رابطہ کاری کے ذریعے مذکورہ جڑواں بچیوں اور ان کے والد کے غزہ سے نکلنے اور اردن کی اراضی میں داخل ہونے کو ممکن بنایا جہاں

سے انہیں سعودی عرب منتقل کیا جائے گا۔اردن میں سعودی سفارت خانے کے مشن نائب سربراہ محمد العتیق کے مطابق خادم حرمین شریفین کی جانب سے ان نوعیت کے معاملات کو خصوصی توجہ حاصل ہوتی ہے۔ فلسطینی جڑواں بچیوں کے علاج اور اپنے والد کے ساتھ سفر کے تمام تر اخراجات سعودی فرماں روا برداشت کریں گے۔العتیق کا کہنا تھا کہ دونوں بچیوں کا آپریشن مملکت میں کنگ عبدالعزیز میڈیکل سٹی میں ہوگا۔واضح رہے کہ دنیا بھر میں جڑے ہوئے جڑواں بچوں کوعلیحدہ کرنے میں سعودی عرب کا پہلا نمبر ہے۔ اس نوعیت کے آپریشن ایک خصوصی سعودی طبی ٹیم کے زیر نگرانی کیے جاتے ہیں۔اس سلسلے میں 17 ممالک سے تعلق رکھنے والے بچوں کے 63 آپریشن کیے جا چکے ہیں جن میں 28 آپریشن مکمل طور پر کامیاب ہوئے جب کہ بقیہ حالتوں میں جڑے ہوئے بچے طبی وجوہات کی بنا پر علیحدہ کرنے کے قابل نہ تھے۔فلسطینی جڑواں بچیوں کے باپ ایوب غانم نے خادم حرمین شریفین کی جانب سے اس انسان دوست جذبے اور عالم اسلام کے بچوں کی دیکھ بھال کے موقف کو گراں قدر قرار دیا۔