افغانستان،داعش کے خلاف لڑائی میں 5 بیٹے قربان کرنیوالی ماں کوتمغے سے نوازا گیا

کابل/واشنگٹن (ڈیلی خبر)افغان صدر اشرف غنی نے داعش کے خلاف لڑائی میں اپنے پانچ بیٹے قربان کرنے والی ماں کو وطن کے لیے ان کے گھرانے کی خدمات کے اعتراف میں تمغہ عطا کردیا۔امریکی میڈیا کے مطابق صدر اشرف غنی نے صوبہ ننگرہار کے ایک دور افتادہ گاؤں کی ایک ماں کو وطن کے لیے ان کے گھرانے کی خدمات کے اعتراف میں تمغے سے نوازا ہے جن کے پانچ بیٹوں کو پچھلے سال داعش کے جنگجوؤں نے اس لئے ہلاک کر دیا تھا کیونکہ وہ مقامی ملیشیا میں شامل ہو کر اپنی آبادیوں کو دہشت گردوں سے بچا رہے تھے،پچھلے سال نیاز بی بی نے اپنے گھر پر داعش کے جنگجوؤں کو دھاوا بولتے اور اپنے 9 میں سے 5 بیٹوں کو قتل ہوتے ہوئے دیکھا، جو وہاں سب ایک ساتھ رہ رہے تھے۔نیاز بی بی نے، جو 12 بچوں کی ماں ہیں جنھوں نے بتایا کہ انہوں نے پہلے میرے بیٹوں کو گولیاں ماریں اور پھر ان کی گردنیں کاٹ دیں،صوبائی حکام کا کہنا ہے کہ نیاز بی بی کے خاندان کو بے یارومددگار نہیں چھوڑا جائے گا۔