عمران خان کیساتھ نازک کلام بندر کو سر پر چڑھانے،لیڈر کہنا بندر کے ہاتھ میں ماچس دینے والی بات ہے: رانا ثناءاللہ

لاہور (ڈیلی خبر) پنجاب کے وزیر قانون رانا ثناءاللہ نے کہا ہے کہ عمران خان پر نرم و نازک کلام کا اثر نہیں ہوتا۔ یہ بندر کو سر پر چڑھانے والی بات ہے اور ایسے شخص کو لیڈر کہنا بندر کے ہاتھ میں ماچس دینے والی بات ہے۔تفصیلات کے مطابق لاہور میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے رانا نثاءاللہ نے چیف جسٹس آف پاکستان اور پاکستان تحریک انصاف کے درمیان ہونے والی گفتگو کا ذکر کیا اور کہا کہ چیف جسٹس بہت قابل اور اچھے انسان ہیں اور بہت ہی شائستہ گفتگو کرتے ہیں۔ میں ان کی عزت و احترام کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے درخواست کرتا ہوں کہ آپ نے جو نرم و نازک کلام عمران خان کیساتھ کیا ہے وہ ناداں پر اثر نہیں کرتا اور اس کا الٹا اثر ہوتا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس طرح کا نرم و نازک کلام کرنا بندر کو سر پر چڑھانے والی بات ہے اور ایسے شخص کو لیڈر کہنا، بندر کے ہاتھ میں ماچس دینے والی بات ہے۔ اسے تو توہین عدالت کا نوٹس جاری ہنا چاہئے کہ تم نے سپریم کورٹ کے فیصلے کو تسلیم نہ کرنے کی جرت کیسے کی۔