جو ثبوت سپریم کورٹ میں پیش نہیں کئے وہ جے آئی ٹی شریفوں سے کیسے نکلوائے گی :اعتزاز احسن

لاہو(ڈیلی خبر )معروف قانون دان اعتزازاحسن نے کہاہے کہ پاناما کیس میں جے آئی ٹی کی تشکیل حوصلہ افزاءنہیں اورنہ ہی جے آئی ٹی آزاداورخودمختارہو گی۔شریف خاندان جائیداد کی ملکیت کوتسلیم کرچکاہے مگرانہوں نے اصل دستاویزات سپریم کورٹ میں پیش نہیں کیں .لاہورہائیکورٹ بارمیں معروف قانون دان اورپیپلز پارٹی کے راہنماءچودھری اعتزازاحسن نے میڈیاکے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ پانامافیصلے پرجے آئی ٹی کی تشکیل سے قبل سپریم کورٹ خودکہہ چکی ہے کہ نیب کاادارہ دفن ہو چکا ہے۔شریف خاندان نے اصل دستاویزات سپریم کورٹ میں پیش نہیں کیں تو جے آئی ٹی کیسے ان دستاویزات کو نکالے گی۔انہوں نے کہا کہ خواجہ سعد رفیق اور رانا ثناءاللہ کی ان پر تنقید انہونی بات نہیں.
مریم نواز کی ڈی جی آئی ایس آئی سے رشتہ داری ظاہر کرنے پرانہیں تکلیف ہوئی،ان کاکہناتھا کہ جی آئی ٹی میں ان اداروں کو شامل کیا گیا جن پر سپریم کورٹ پہلے ہی عدم اعتماد کر چکی ہے۔