دپیکا اور سنجے لیلا کے سر کی قیمت 10 کروڑ مقرر، جان کو شدید خطرہ

ممبئی:(ڈیلی خبر) بی جے پی رہنما نے دپیکا اور سنجے لیلا بھنسالی کے سر کی قیمت 10 کروڑ مقرر کرتے ہوئے رنویر سنگھ کی ٹانگیں توڑنے کی دھمکی ہے۔بھارتی فلم ’پدماوتی‘ کی ریلیز میں مشکلات ختم ہونے کے بجائے مزید بڑھتی جارہی ہیں، پہلے راجپوت برادری نے فلم کی ریلیز کی صورت میں پرتشدد رویہ اختیار کرنے اور دپیکا پڈوکون کو ناک کاٹنے کی دھمکی سمیت ہدایت کار سنجے لیلا بھنسالی کے سر کی قیمت 5 کروڑ بھی مقرر کی تھی، جس کے بعد سنسر بورڈ نے بھی فلم کے سرٹیفکیٹ کے لیے دی گئی درخواست کو فلم ساز کو واپس کردیا۔

گزشتہ روز فلم کو ریلیز کرنے والی پروڈکشن کمپنی ’’ویا کوم 18‘‘ نے خود ہی فلم کی ریلیز روکنے کا اعلان کیا تھا تاہم اب بی جے پی رہنما نے دپیکا پڈوکون اور سنجے لیلا بھنسالی کے سر کی قیمت 10 کروڑ مقرر کردی ہے جب کہ رنویر سنگھ کی ٹانگیں توڑنے کی بھی دھمکی دی ہے۔
اس خبر کو بھی پڑھیں : بھارتی سنسر بورڈ نے فلم ’’پدماوتی‘‘ کی ریلیز میں رکاوٹ کھڑی کردیبھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ ہریانہ سے تعلق رکھنے والے بی جے پی کے میڈیا کوآرڈینیٹر سورج پال امو نے اعلان کیا ہے کہ جو کوئی بھی دپیکا پڈوکون اور سنجے لیلا بھنسالی کا قتل کرے گا اس کو 10 کروڑ روپے انعام دیا جائے۔ صرف یہی نہیں بی جے پی رہنما نے مزید کہا کہ اداکار رنویر سنگھ نے ہدایت کار سنجے لیلا بھنسالی کی معاونت کی لہذا اگر انہوں اپنے الفاظ واپس نہیں لیے تو رنویر سنگھ کی ٹانگیں توڑ دی جائیں گی۔بی جے پی رہنما سورج پال امو کے بیان پر بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے وضاحت طلب کرلی ہے۔ دوسری جانب مدھیا پردیش کے وزیراعلیٰ شوراج سنگھ چوہان نے ریاست میں فلم پدماوتی کی ریلیز پر پابندی لگاتے ہوئے کہا ہے کہ ریاست میں فلم کسی صورت ریلیز نہیں ہونے دی جائے گی۔