میرے رشک قمر: نصرت فتح علی خان کی قوالی کے ساتھ گھٹیا مذاق کیوں کیا گیا؟ آپ بھی جانیئے

لاہور(شوبز ڈیسک) پاکستان کے بین الاقوامی شہرت یافتہ قوال اُستاد نصرت فتح علی خان مرحوم 80ء کی دہائی میں گائی گئی قوالی “میرے رشکِ قمر” کی شہرت سے فائدہ اٹھاتے ہوئے بہت سے غیر معروف گلوکاروں نے اسے کامیابی کی سیڑھی تو بنایا ہے مگر کسی کے سُر کم لگے تو کسی نے تال کا خیال تک نہیں رکھا۔اس سلسلے میں میوزک سے تعلق رکھنے والے سنجیدہ حلقوں کا کہنا ہے کہ استاد نصرت فتح علی خان مرحوم کی گائی ہوئیں قوالیاں، غزلیں، گیت اور ملی نغمے بلاشبہ بے حد مقبول ہوئے ہیں لیکن انکی ایک قوالی ” میرے رشک ِ قمر” کو جس انداز سے غیر معروف گلوکار گا کر شہرت حاصل کرنا چاہتے ہیں اور اپنی اس کاوش کو استاد نصرت فتح علی خان کو ٹربیوٹ قرار دیتے ہیں ، انہیں اس بات کا خیال رکھنا چاہیئے کہ یہ اس عظیم گلوکار کے فن کو ٹربیوٹ نہیں بلکہ انکے فن کو نقصان پہنچانے کی ایک سازش ہے اگر گلوکار اس قوالی کے ذریعے ہی شہرت حاصل کرنا چاہتے ہیں تو انہیں گانے سے پہلے پوری اور مکمل ریاضت کرنی چاہیئے۔