مصری گلوکارہ کو کیلا کھاتے ہوئے رنگے ہاتھوں پکڑ لیاگیا، جیل میں ڈال دیا گیا

قاہرہ(ڈیلی خبر) مصری پاپ گلوکارہ ”شئیمہ“ کو میوزک ویڈیو میں شرمناک انداز میں کیلا کھاتے دکھائے جانے کے بعد اسے حراست میں لے لیا گیا اور الزام عائد کیا گیا ہے کہ لڑکی نے جذبات کو ابھارا جبکہ گلوکارہ نے ویڈیو پر ردعمل سامنے آنے کے بعد معافی بھی مانگ لی اور موقف اپنایاکہ ” جو سب کچھ ہوا ہے میں اس کی توقع نہیں کررہی تھی کہ ہرکوئی ’حملہ‘ کردے گا“۔ویڈیو میں شئیمہ کو ایک کلاس روم میں مردوں کے سامنے نیم برہنہ حالت میں کیلے پر دودھ ڈالنے کے بعد کھاتے ہوئے، سیب کو ہونٹوں سے لگاتے ہوئے ہلکا پھلکا ڈانس کرتے ہوئے دکھایاگیا تھا ، کلاس روم میں موجود بورڈ پر کلاس 69لکھا تھا۔ یہ ویڈیو سامنے آتے ہی گلوکارہ کیخلاف شکایات موصول ہوناشروع ہوگئیں جن کی بنیاد پر 21سالہ گلوکارہ کو حراست میں لے لیاگیاجبکہ مقامی میڈیا نے بھی ویڈیو کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔

برطانوی میڈیا کے مطابق گلوکارہ کے حامیوں کے نزدیک اس کی گرفتاری2013ءکی فہرست میں خواتین کے لیے بدترین ملک قراردیئے جانے والے عرب ملک مصر میں خواتین پر دباﺅ کی ایک علامت ہے ۔ گلوکارہ نے ویڈیو پرسوشل میڈیا پر معافی مانگتے ہوئے لکھاکہ ”نوجوانی میں ہی گلوکارہ بننے کے خواب سجانے والی نوجوان گلورہ ہونے کے ناطے انہیں ردعمل کا اندازہ نہیں تھا، میں ان تمام لوگوں سے معذرت چاہتی ہوں جنہوں نے ویڈیو دیکھی اور ناموزوں ہونے کی وجہ سے کوفت کا سامنا کرنا پڑا“۔یادرہے کہ مصرکا شمار بھی کنزرویٹواور مذہبی معاشروں میں ہوتاہے جہاں یہ تصور کیا جاتاہے کہ مردوں کی طرف سے ہراساں کیے جانے سے بچنے کے لیے خواتین کو اونچی آواز میں بات بھی نہیں کرنی چاہیے اور نہ ہی کھلے عام قہقہے لگانے چاہیں ۔