جوں جوں جیل جانے کا وقت قریب آتا جارہا ہے میاں صاحب کے لہجے کی تلخی بڑھتی جارہی ہے ، وہ چاہتے ہیں کہ جیل جانے سے پہلے پہلے ۔۔۔ عارف نظامی نے تہلکہ خیز انکشاف کردیا

لاہور (ڈیلی خبر) سینئر صحافی و تجزیہ کار عارف نظامی کا کہنا ہے کہ جوں جوں جیل جانے کا وقت قریب آتا جا رہا ہے نواز شریف کے لہجے کی تلخی بڑھتی جارہی ہے، ان کا فیصلہ صاف نظر آرہا ہے، وہ جیل جانے سے پہلے کچھ نہ کچھ کرنا چاہتے ہیں اسی لیے ہر روز جلسوں کا شیڈول دیا ہے۔نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے عارف نظامی نے کہا کہ جوں جوں جیل جانے کا وقت قریب آتا جا رہا ہے نواز شریف کے لہجے کی تلخی بڑھتی جارہی ہے، ان کا فیصلہ لکھا جا چکا یعنی صاف نظر آرہا ہے۔ ان کو جوڈیشری اور اسٹیبلشمنٹ نے مل کر فارغ کیا اور اب باقیاتِ نواز شریف کو ہٹایا جارہا ہے، میاں صاحب چاہتے ہیں کہ پابند سلاسل ہونے سے پہلے پہلے کچھ نہ کچھ کر جائیں کیونکہ شہباز شریف نہیں بلکہ وہی مسلم لیگ ن کے انجن ہیں، اسی لیے انہوں نے 13 مئی سے پہلے پہلے جلسوں کا شیڈول دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ باقی لوگوں نے اسٹیبلشمنٹ اور ڈکٹیٹرز کا سہارا لیا لیکن عمران خان کا راستہ مختلف ہے۔ انہوں نے ہسپتال بنایا ، وہ ایک سٹار تھے، انہوں نے 20 سال کافی دھکے کھائے ہیں وہ کسی ڈکٹیٹر کے وزیر یا سفیر نہیں رہے۔نواز شریف جو عمران خان پر اشاروں پر چلنے کا الزام لگاتے ہیں اس سے پہلے بھی یہ سب کسی نہ کسی کے اشارے پر ہوتا رہا ہے، کس کے اشارے پر نواز شریف کوٹ پہن کر زرداری کے خلاف عدالت گئے؟، کس کے حکم پر انہوں نے جونیجو لیگ توڑی؟۔نواز شریف چاہتے ہیں کہ فوج کے اوپر ان کا غلبہ ہو اور وہ کہتے ہیں کہ اگر انہیں ووٹ مل جائیں تو وہ غالب ہوجائیں گے لیکن پاکستان میں ان آئیڈیلز پر حکمرانی کرنا بہت مشکل ہے جن کا تذکرہ اپوزیشن میں رہ کر کیا جاتا ہے۔