امریکہ کے صدر بش پر جوتا پھینکنے والا عراقی صحافی منتظر الزیدی اس وقت کہاں ہے اور کیا کر رہا ہے؟ حیرت انگیز تفصیلات سامنے آ گئیں

بغداد(مانیٹرنگ ڈیسک)غیر ملکی میڈیا کے مطابق امریکی صدر جارج ڈبلیو بش پر جوتاپھینکنے والا صحافی منتظر الزیدی عراقی پارلیمنٹ کے انتخابات میں حصہ لے رہا ہے۔دس سال قبل 2008میں صحافی جو کہ اس وقت ایک مصری ٹی وی نیوز چینل البغدادیہ سے منسلک تھا، اس نے عراقی پردورے پرآئے امریکی صدر جارج ڈبلیو بش پر عراقی وزیراعظم نورالمالکی کے ساتھ پریس کانفرنس میںایک ایک کرکے اپنے دونوں جوتے دے مارے تھے۔امریکی صدرنے جوتوں کے حملے میں خود کو بچالیاتھا۔ تاہم صحافی کو عراقیوزیراعظم کے محافظوں نے حراست میں لے لیاتھا۔جوتے پھینکتے ہوئے صحافی نے امریکی صدر کو للکارتے ہوئے کہا تھاعراق میں مرنے والوں، یتیموں، بیواؤں کی طرف سے یہ جوتے تمھارے لئیے ہیں۔ مہمان صدر پر جوتا پھینکنے کے جرم میں اسے 9ماہ کی قید سنائی گئی تھی اورتاہم اسے اس کے اچھے کردار اور رویے پر جلد جیل سے رہاکردیاگیاتھا۔منتضر الزیدی 2009میں ملک چھوڑکر چلاگیاتھا اور 2011میں واپس آیاتھا۔ اب وہ ملک کے قانون سازی کے ادارے نمائندگان کی کونسل کے انتخابات میں حصہ لے رہاہے۔ یہ انتخابات 12مئی کوہونگے۔