نوازشریف کو احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر رہنما نے کتابوں کا تحفہ پیش کیا

اسلام آباد(ڈیلی خبر )احتساب عدالت میں سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف العزیزیہ ریفرنس کی سماعت میں پیشی کے دوران پارٹی رہنما نے نوازشریف کو کتابوں کا تحفہ پیش کیا ۔تفصیلات کے مطابق پارٹی رہنما کی جانب نوازشریف کو رابرٹ گرین اور جوز ایلفر کی کتاب ” دی 48 لاز آف پاور “ تحفے میں دی گئی جبکہ اس کے علاوہ انہیں اسلامی وظائف کی کتابیں بھی تحفہ کی گئیں جسے نوازشریف نے اپنے پرسنل سٹاف کے رکن شکیل احمد کے حوالے کر دیا ۔

سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس کی سماعت احتساب عدالت میں دوبارہ ہوئی، جس کے دوران نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث کی پاناما جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیائ پر جرح جاری رہی۔سماعت کے دوران سابق وزیراعظم نواز شریف کو اڈیالہ جیل سے احتساب عدالت لایا گیا۔آج سماعت کے دوران خواجہ حارث نے واجد ضیاءسے جرح کرتے ہوئے سوال کیا کہ کیا جے آئی ٹی کے پاس وہ دستاویزات ہیں جس میں ہل میٹل کو کمپنی ظاہر کیا گیا ہو؟واجد ضیاء نے جواب دیا کہ جے آئی ٹی کے پاس موجود ایک سورس دستاویز میں ایچ ایم ای کو کمپنی لکھا گیا ہے اور یہ سورس دستاویز ایم ایل اے لکھے جانے کے بعد 20 جون 2017 کو موصول ہوئی تھی۔انہوں نے بتایا کہ ایم ایل اے میں 05/2004 کو ہل میٹل اسٹیبلشمنٹ کے ان کارپوریشن کا سال لکھا اور ایم ایل اے لکھے جانے کے وقت کسی گواہ نے ان کارپوریشن کا سال نہیں بتایا تھا۔اس کے ساتھ ہی احتساب عدالت نے العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس کی سماعت کل ساڑھے بارہ بجے تک ملتوی کردی، جہاں خواجہ حارث واجد ضیاءپر جرح جاری رکھیں گے۔